GCWUF Logo


Government College Women University Faisalabad

2nd Two Days International Seerat Conference

فیصل آباد () استحکام پاکستان کئی قسم کے اندرونی و بیررونی چیلنچز میں گھرا ہوا ہے پاکستان کی ترقی کا پہیہ آگے بڑھنے کی بجائے ساکت ہو گیا ہے ایسے حالات میں ملک کو امن و امان اور ترقی کا گہوارہ بنانے کے لئے سکالرز اور دانشوروں کو اپنا کردار ادا کرنا ہے جو سیرت طیبہ کی روشنی کی پیروی کرتے ہوئے ملک کو نبرد آزما حالات سے نکال سکیں۔وائس چانسلر گورنمنٹ کالج ویمن یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر نورین عزیز قریشی ان خیالات کا اظہار انہوں نے شعبہ اسلامک اینڈ اورئینٹل لرننگ کے زیر اہتمام منعقدہ دوسری بین الاقومی سیرت کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ استحکام پاکستان ہم سب کی خواہش ہے اور اس کے نفاذ کے لئے ہم ہمیں اسلامی اقدار و روایات کی پیروی کرنی ہے اور کہا کہ بحیثیت و امتی ہمیں نبی کریم ﷺ کی سیرت کی سنہری کرنوں سے مستفید ہونے کا موقع ملا ہے اورکہا کہ ہمیں آپ ﷺ کے اس پیغام “مجھے تمام جہانوں کے لئے رحمت بنا کر بھیجا گیا ہے”کو نہ صرف سمجھنا ہے بلکہ اپنی زندگی کے ہر پہلو خواہ وہ تہذیبی ،سماجی،اخلاقی یا معاشی ہو کو سیراب کرنا ہے انہوں نے مزید کہا کہ بحیثیت خواتین ہمیں اپنے مقام و منصبے کو پہچانتے ہوئے ملک کی ترقی و استحکام پاکستان میں اپنا کردار ادا کرنا ہے تاکہ ہمارا ملک ترقی کے زینے طے کرتے ہوئے ترقی پذیر سے ترقی یافتہ ممالک کی صف میں کھڑا ہو سکے ۔پروفیسر ڈاکٹر اسحاق قریشی نے کہا کہ استحکام پاکستان ہم سب کی خواہش ہے لیکن ہمیں یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ اس ریاست کو قائم کرنے کا مقصد کیا تھا بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کیسا پاکستان چاہتے تھے انہوں نے مزید کہا سیرت طیبہ ،افکار طیبہ جس میں کل انسانیت کے دکھوں کا مداوہ اور تمام مسائل کا حل ہے کی ہمیں پیروی کرنی ہے اور اپنی زندگی کو ان کے بتائے ہوئے لائحہ عمل کے مطابق گزارنا ہے
ممبر صوبائی اسمبلی ڈاکٹر نجمہ افضل نے کہا کہ ہمیں سیاسی سماجی اور معاشی استحکام کے لئے بھر پور محنت کرنی ہے اور پاکستان کے استحکام اور نظریاتی تشخص کو قائم رکھنا ہے ڈاکٹر ثنااللہ الزری نے کہا کہ اسلامی ثقافت کے اندر جو انفرادی سطح ہے اس کو اجاگر کرنا ضرروی ہے معاشرہ ثقافت کے بغیر ترقی کی منازل طے نہیں کر سکتا ہے ہمیں اپنی ثقافت کو مضبوط بنانا ہے اور ملکی و بین الاقومی سطح پر اجاگر کرنا ہے ڈاکٹر عصمت ناز یونیورسٹی آف ملتان نے کہا کہ اسلام میں فرقہ بندی کو نا پسند کیا گیا ہے ہے ہمیں سنت نبی پر عمل پیرا ہو کر دین دنیا و آخرت میں سرخرو ہونا ہے اسی طرح احمد بل قاسم جابری ڈاکٹر اکرام الحق الزاہری ، ڈاکٹر خالد فواد ،ڈاکٹر صالح الدین ثانی و دیگر بین الاقوامی سکالرز نے سیرت نبی کی روشنی میں اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا ۔