GCWUF Logo


Government College Women University Faisalabad

One Day Seminar on Visual Culture of Islam & its Significance (13-10-2017)

پی آر اونمبر247 مورخہ13-10-2017
میڈیا سیل گورنمنٹ کالج ویمن یونیورسٹی فیصل آباد
“اسلام کی بصری ثقافت اور اس کی اہمیت”

فیصل آباد( )گورنمنٹ کالج ویمن یونیورسٹی میں ہائر ایجوکیشن کمیشن کی سالگرہ کی تقریبات کو مد نظر رکھتے ڈئریکٹر سٹوڈنٹس افےئرز ،آرٹ کلب گورنمنٹ کالج ویمن یونیورسٹی اور کیرئیرکونسلنگ سنٹر کے باہمی اشراک سے ایک روزہ سیمینار”اسلام کی بصری ثقافت اور اس کی اہمیت”منعقد کروایا گیاجسکی صدارت وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر نورین عزیز قریشی نے کی۔سیمینار میں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس سیمینار کے انعقاد سے طالبات ملتان،چنیوٹ،ڈیرہ غازی خان اور تونسہ میں 19ویں صدی اور اس کے اوائل میں صوفیہ اکرام اور نامور مصوروں کی شاہکار کیلی گرافی،نقاشی ووڈ ورک اور ہمہ گل کے خوبصورت کام سے متعارف ہوئیں ہیں اور کہاکہ ان تما م مصوروں نے رنگوں کے امتزاج کے زریعے پیار، محبت اور کائنات میں غوروفکر اور تدبر کا درس دیا ہے
اور کہا کہ ان مصوروں نے نہایت خوبصورتی کے ساتھ اپنی ثقافت اور مذہب کے امتزاج کی عکاسی کی ہے انہوں نے طالبات کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ قدرت نے ہر ایک کو بے شمار خوبیوں اور صلاحیتوں کے ساتھ نوازا ہے ضرورت اس امر کی ہے کہ ان صلاحیتوں کو پہچانیں اور ان میں نکھار پیدا کر کے اپنی متعین منزل کو حاصل کریں۔انہوں نے امریکی ماہر فنون لطیفہ ڈاکٹر ٹرینا لائنزیونیورسٹی آف کیلیفورنیا اور عبد الرحمن نقاش کو خراج تحسین پیش کیا کہ وہ ہماری تاریخی بصری ثقافت کو نوجوان نسل اور پوری دنیا میں متعارف کروا رہے ہیں۔پروفیسر ڈاکٹر ٹرینا لائنز نے 16ویں ،17ویں،18ویں اور 19ویں صدی کے ہمہ گل کے خوبصورت نقش ونگار اور تہذیب پر روشنی ڈالی اور کہا کہ میری خواہش ہے کہ اس ثقافت کو مغرب میں بھی متعارف کر واں تاکہ وہ اس سے روشناس ہو سکیں۔پروفیسر ڈاکٹر غلام شمس انچاج شعبہ اسلامیات گورنمنٹ کالج یونیورسٹی فیصل آباداور عبد الرحمن نقاش نے کہا اور کہا کہ ہمہ گل کے نقش ونگار جس میں پھلوں،پھولوں ،سببزیوں ،خوبصورت پرندوں اور سانپ کے زریعے اپنا پیغام پہنچایا ہے کہ منزل مقصود تک پہنچانے کے لئے مسائل کا سامنا بھی درپیش ہوتا ہے لیکن یقین محکم اور عزم کے ساتھ منزل حاصل کی جا سکتی ہے 
اور کہا کہ فائن آرٹس کے طالب علم اس فن کو قدیم وجدید کے امتزاج کے ساتھ آگے لے کر چلیں اور اس ثقافت کو زندہ رکھیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ہمہ گل میں صوفی ازم ہے اور ہر وہ انسان جو اپنے دل ودماغ کوپاکیزہ رکھتا ہے اور ذات کی معرفت تک پہنچتا ہے صوفی ہے آخر میں وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر نورین عزیز قریشی نے مہمانوں کو سونئیرز سے نوازا۔ڈائریکٹرسٹوڈنٹس افےئرز مس اسماء عزیز نے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔