GCWUF Logo


Government College Women University Faisalabad

Two Days Seminar on “Recent Trends & Research Approaches in Biochemistry” (May 08-09, 2018)

پی آر اونمبر42/2018 مورخہ08-05-2018
میڈیا سیل گورنمنٹ کالج ویمن یونیورسٹی فیصل آباد
“بائیو کیمسٹری میں موجودہ رحجانات اور ریسرچ اپروچز”

فیصل آباد()سائنس دان اور ریسرچرز معاشرے کا اہم ستون ہیں یہ اپنے علم و تحقیق کے ذریعے معاشرتی مسائل کی نشاندہی کرتے ہیں اور ان کا حل نکالتے ہیں جس کے معاشرے پر بلاواسطہ یا بالواسطہ مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں وائس چانسلر گورنمنٹ کالج ویمن یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر نورین عزیز قریشی ان خیالات کا اظہار انہوں نے شعبہ بائیو کیمسٹری کے زیر اہتمام منعقدہ دو روزہ سیمینار “بائیو کیمسٹری میں موجودہ رحجانات اور ریسرچ اپروچز”کی افتتاحی تقریب میں کیا ۔انہوں نے کہا کہ لیبارٹریز میں کی جانے والی ریسرچ کمیونٹی کے ساتھ منسلک ہوتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہائر ایجوکیشن کمیشن طلباء کو ڈگری دینے کے ساتھ ساتھ سافٹ سکلذ ،کاروباری معلومات اور مہارتیں دینے میں سرگرم عمل ہیں تاکہ فارغ التحصیل ہو کر یہ نوجوان نسل کسی معاشی مسلے کا شکار نہ ہو ۔انہوں نے مزید کہا کہ وقت بدل چکا ہے جدید دور کے نئے رجحانات اور تقاضے ہیں جن کو مد نظر رکھتے ہوئے باہمی اشتراک کی ضرورت ہے تاکہ معاشرتی ماحولیاتی اور دیگر تمام مسائل کو حل کر کہ بہترین معیار زندگی قائم کیا جا سکے۔ڈاکٹر شاہد بیگ ہیڈ آف ہیلتھ بائیو ٹیکنالوجی نبجی نے جنیاتی امراض ،جیسے کے تھلسیمیا ،سر کا چھوٹا ہونا ،ہاتھوں کی انگلیوں کا کم یا ذیادہ ہونا اور ناخنوں کے مختلف امراض سے متعلق آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان 2017کے اعداد و شمار کے مطابق آبادی کے لحاظ سے دنیا کا چھٹا بڑا ملک ہے جس میں 70% سے زائد کزن میرج کی جاتی ہے جس کی وجہ سے ان بیماریوں میں مزید اضافہ ہو رہا ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ جنیاتی امراض ایسی ہیں جن کا ابھی تک کوئی تسلی بخش علاج نہیں ہے اس لئے خاندان میں شادی سے پہلے ایک دفعہ ٹیسٹ ضرور کروائیں تاکہ آنے والی نسل کو ان سے محفوظ رکھا جا سکے۔ ڈاکٹر خالد محمود خان سابق وائس چانسلر ایرڈ ایگری کلچر یونیورسٹی نے شعبہ بائیو کیمسٹری کی تاریخ اور انٹروڈکشن سے متعلق معلومات فراہم کیں۔ٹیکنیکل سیشن میں ڈاکٹر حامد راشد ،ڈاکٹراظہر رسول ،ڈاکٹر عمران محمود خان اور انچارج شعبہ بائیو کیمسٹری ڈاکٹر سمیرا شاہین نے خطاب کیا۔